ادارے – تنظيميں – نجى شعبے
ادارے، تنظيميں اور نجى شعبے
 

سنہ 2013 ء كے وزارتى فيصلہ نمبر24 كے مطابق قرآن كريم اور اسكے علوم سے متعلق تمام چيزوں كو شامل كرنے كى غرض سے اس مقابلہ كے نشاط وعمل ميں وسعت پيدا كرنے والى قانون ساز تبديلى كے بعد، كمپنيوں تنظيموں اور نجى شعبوں كےلئے شيخ جاسم بن محمد بن ثانى، قرآنى مقابلہ كى ايك اور شاخ قائم كى گئى ۔
قرآن كريم كى عالمگيريت "رحمة للعالمين" (سارے جہان كے لئے رحمت) اور ہر زمان ومكان كےلئے اس كے تطابق كے مظاہر ميں سے يہ شاخ بھى ايك مظہر ہے، اور جيسا كہ اس ميں كوئى بھى شك نہيں كہ لوگوں كے درميان قرآن كو عام كرنا ايك شرعى واجب عمل ہے۔
اور معاشرہ كے تمام قسم كے لوگوں كے لئے قائم كئے جانے والے اس مقابلے نے، اپناايمانى خوشبو بكھيرتے ہوئے، عالمگير قرآنى مقابلوں كے ميدان ميں اپنى نوعيت كى ايك لمبى چھلانگ لگائى ہے ۔
اور يہ شاخ قطر ميں مقيم نئے مسلمانوں كےلئے "المهتدين الجدد" كے نام سے، ٹويٹر پر نوجوانوں اور خواتين كے لئے "غرد للقرآن" كے نام سے، "إذاعة القرآن الكريم" كى طرف سے "أهل القرآن" كے نام سے نشر ہونے والے اور نوخيز لوگوں كے لئے "رتل وارسل" كے نام سے نشر ہونے والے مقابلوں پر مشتمل ہے ۔

 
نئے مسلمان
 

"المهتدين الجدد" (نئے مسلمانوں) كے نام سے ہونے والے مقابلے نے، پورى دنيا ميں ہونے والے قرآنى مقابلوں كے اندر ايك نئے مفہوم كا اضافہ كيا، جس نے نئے مسلمانوں كے دلوں ميں قرآن كريم كى بنيادى چيزوں كو راسخ كيا ، اسلامى اقدار كو قوت وعزت بخشي اور قطر كےاندر وباہر، لوگوں كى آپس ميں انسانى شناخت كى قدر ومنزلت كو بڑھايا ۔
اور اس مقابلے كا دروازہ ہر نئے مسلمان مرد وعورت كے لئے كھلاہے، اور يہ قرآن كريم ميں سے عم پارہ كے حفظ كرنے پر مبنى ہے، اور اس كى تقريبات كا اہتمام شيخ عبد الله بن زيد آل محمود ثقافتى اسلامى مركز ميں كيا جاتا ہے ۔
انعامات:
"المهتدون الجدد" (نئے مسلمانوں) والامقابلہ، – مشاركين كى تعداد كے اعتبار سے- ہر سال تمام شركت كرنے والے فائز مرد وخواتين كے لئےنقدى انعام پيش كرتا ہے جس كا كل مبلغ تقريباً : 100,000 قطرى ريال ہے، اور ان ميں سے پہلے دس كامياب ہونے والوں ميں سے ہر ايك كو 2000 قطرى ريال كا انعام ديا جاتا ہے ۔

 
قرآن ٹويٹر
 

يہ مقابلہ الله تعالى كى عزيز كتاب كے فضائل سے متعلق ٹويٹ كرنے اور اس كے اوامر ونواہى نيز دائمى رہنے والى انسانى اقدار كو ايسے بہترين اور پركشش انداز سے مضبوطى سے پكڑنےپر آمادہ كرنے والا مقابلہ ہے، جو قرآن كريم اور اس كى آيات كريمہ سے برابر تعلق ركھنے والوں كے لئے (لوگو كے دلوں، ميں) محبت پيدا كردے ۔
"غرد للقرآن" (قرآن ٹويٹر) يہ وہ پہلا مقابلہ ہے جسكى طرف "شبكة أهل قطر الأولى" (قطر والوں كا پہلا نيٹ ورك)" تلفزيون قطر" (قطر ٹيلى ويژن)، "إذاعة القرآن الكريم" (قرآن كريم كى نشريات) اور "اسلام ويب" كے تعاون سے شيخ جاسم بن محمد بن ثانى قرآنى مقابلہ كو قائم كرنے والوں نے لوگوں كو دعوت دى – اور يہ مقابلہ اپنے مختلف ذرائع ابلاغ كے ساتھ صحافيوں كو شامل كرنے كا سب سے پہلا قدم ہے ۔
اس مقابلے كا مقصد يہ ہے كہ تمام ٹويٹرز - خاص طور پر نوجوانوں - كے درميان آپس ميں سبقت كرنے والى روح كوبيدار كيا جائے تاكہ كتاب اللہ سے ان كى گہرى محبت، حرص اور لگاؤ كا پتہ چل سكے ۔
انعامات:
"غرد للقرآن" والا مقابلہ، پہلے دس فائزين كو نقدى انعام ديتاہے، جو كہ (اوپر سے نيچے كى طرف آتے ہوئے) سب سے پہلے نمبر پر كامياب ہونے والے شخص كے لئے 10,000 قطرى ريال سے شروع ہوكر، ( سب سے نيچے) دسويں نمبر پر كامياب ہونے والے شخص كے لئے 1000 قطرى ريال تك پہنچتا ہے ۔

 
قرآن والوں كا پروگرام
 

شيخ جاسم بن محمد بن ثانى قرآنى مقابلہ ممتاز كميونٹىز كى شراكتوں كا اہتمام بھى كرتا ہے؛ تاكہ وه اپنے پيغام اور ويژن كو بہترين شكل ميں پيش كرسكے اور ان شراكتوں ميں سب سے اہم، قطر كے "إذاعة القرآن الكريم" اور اسكے ممتاز پروگرام "أهل القرآن" والى شراكت ہے،
اور يہ پروگرام قرآن كريم كى تلاوت ميں رغبت ركھنے والوں كے ٹيلى فون كا استقبال كرتے ہوئے لوگوں كى آپس ميں بات چيت، فيصلہ كرنے والى كميٹى كے ذريعہ ان كى آواز كى جانچ پڑتال اور پھر ان ميں سے سب سے بہترين دس آوازوں كا انتخاب كركے ان آواز والوں كى عزت افزائى كے ناحئے سے ممتاز ہے ۔
انعامات:
"أهل القرآن" والا پروگرام، اس ميں كامياب ہونے والوں كو نقدى انعامات بھى ديتا ہے اور ان انعامات كى ٹوٹل قيمت تقريباً 100,000 قطرى ريال ہے جو كہ تيس فائزين كے درميان تقسيم كيا جاتا ہے، اوريہ انعام سب سے پہلے فائز كے لئے 10,000 قطرى ريال سے شروع ہوكر (سب سے آخرى فائز كے لئے) 500 قطرى ريال تك پہنچتا ہے اور يہ امتيازى طور پر تلاوت كرنےوالوں كو، ان كى ہمت افزائى كے طور پرديا جاتا ہے ۔

 
توقف اور روانى ساتھ تلاوت كرو
 

"رتل وارسل" يہ مقابلہ واٹساپ پر كتاب الله كى مكتوب آيتوں كى تلاوت كے لئے خاص ہے اور يہ مشاركين كے دلوں ميں قرآن كريم اور اس كے دائمى اقدار سے مرتبط رہنے ميں رغبت پيدا كرتا ہے ۔
"رتل وارسل" وہ پہلا قرآنى مقابلہ ہے جس كى طرف، شيخ جاسم بن محمد بن ثانى قرآنى انعامى مقابلہ كو قائم كرنے والوں نے دعوت دى اور اس مقابلہ كو دونوں صنفوں ميں سے پانچ سال سے ليكر اٹھاره سال تك كے لوگوں كے لئے فراہم كيا گيا ہے ۔
اس مقابلے كا مقصد يہ ہے كہ نوخيزوں كے درميان اچھى طرح سےآپس ميں سبقت كرنے كى روح بيدار ہو جائے، نيز ٹيلى فون كے جديد اسباب ووسائل كے ذريعہ الله تعالى كى كتاب سے ان كا تعلق مضبوط ہوجائے ۔

انعامات:

"رتل وارسل" والامقابلہ (اوپر سے نيچي كى طرف) پہلے كے دس فائزين كو نقدى انعامات ديتا ہے، اور پہلا فائز 10,000 قطرى ريال كا انعام پاتا ہے جبكہ دسويں پوزيشن پر كامياب ہونے والا 1000 قطرى ريال كا انعام پاتا ہے ۔